Columns

A new face of the ghazal

August 23, 2015

Intizar Husain — I RECENTLY received a research journal, Taqeeqi Zawiay, from the Urdu Department of Al-Khair University — a university hitherto unknown to me — in Bhimber. A casual look at the contents of this journal made me curious and a few titles immediately attracted my attention including ‘Sher Afzal Jafri, Punjabi Siqafat ka Akkas’ written by Mohammad Arif Mughal, a research ۔۔۔

Over to ‘Urdish’

August 21, 2015

Zubeida Mustafa — LANGUAGE continues to be an enigma in Pakistan. For the umpteenth time education is being ‘reformed’ in this country. Federal Minister of Planning and Development Ahsan Iqbal has now announced that ‘Urdish’ will be used as the medium of education in the ۔۔۔

The voice of the forgotten

August 9, 2015

Intizar Husain — I WAS required to write this column with reference to Aug 14, our independence day. In search of some relevant book I turned to my bookshelf and from the row of books pertaining to Partition literature I picked out, at random, a book running in two volumes under the title India Partitioned: The other Face of Freedom which is a collection of selected pieces from Partition ۔۔۔

Intellectuals of Islam

August 2, 2015

Intizar Husain — THIS is with reference to my previous column published on July 26. Some readers have taken exception to Daud Rahbar’s statement that “the Urdu literature of the past two centuries is in some ways richer and profounder than the Persian and Arabic literature of the same period”. They doubt if it is really ۔۔۔

ریت کا بیٹا، عبدالقادر جونیجو

July 29, 2015

مستنصر حسین تارڑ — چنانچہ اس یونیورسٹی کی جانب سے عبدالقادر جونیجو کے ناول ’’دے ڈیڈ رِور‘‘ یا ’’مُردہ ہو چکا دریا‘‘ کی افتتاحی تقریب ایک پانچ ستارہ ہوٹل کے ایک بے رُوح ہال میں منعقد ہو رہی تھی اور وہاں پہنچ کر مجھے معلوم ہوا کہ جونیجو کے ناول کے علاوہ ایک جاسوسی ناول ’’کوگن پلین‘‘ جو مرزا صاحب کا تصنیف کردہ ہے اُس کی رونمائی بھی مشترکہ طور پر ہو رہی تھی۔۔۔ یعنی ایک محفل یا ایک تیر سے دو ناول شکار کئے جا رہے تھے۔ اگرچہ ان دونوں کے درمیان انگریزی زبان کے سوا اور کچھ مشترک نہ تھا۔۔۔ صاحب صدر نے جونیجو کا ناول تو پڑھ رکھا تھا لیکن مرزا صاحب کے ناول کو اُن طویل اور بورنگ تقریروں کے درمیان انہوں نے، یعنی میں نے کہیں کہیں سے چکھ لیا تاکہ صدارتی تقریر میں، میں ناول کے بارے میں اپنے علم و فضل کی دھاک بٹھا دوں۔۔۔اگرچہ وہ نہ بیٹھی۔۔۔ تقریب کے کمپیئر ایک معزز مولانا تھے جنہوں نے بہ زبان انگریزی اپنی قادرالکلامی سے حاضرین کے چھکّے چھڑا دیئے۔۔۔ اُن کے چھکّے مارنے کا ریکارڈ ویسٹ انڈیز کا کرس گیل بھی نہیں توڑ سکتا۔۔۔ البتہ مقررین کی فہرست بے حد متاثرکن تھی، سلمان شاہد، ۔۔۔

علمی تحقیق

July 27, 2015

انتظار حسین — یونیورسٹیوں میں علمی تحقیق کی سرگرمی شب و روز جاری رہتی ہے۔ علمی معاملات عام لوگوں کے لیے دور کی کوڑی ہیں۔ سو اگر کوئی بڑی دریافت ہو بھی گئی تو انھیں کیا۔ مگر اب برمنگھم یونیورسٹی میں تحقیق کا ایسا شگوفہ پھوٹا ہے کہ اس کی مہک یونیورسٹی کے محققوں کے حلقہ سے نکل کر برمنگھم کی مسلمان آبادی تک جا پہنچی ہے۔ برمنگھم میں مسلمان خاصی بڑی تعداد میں آباد ہیں۔ ان دنوں ان سب کی پرشوق نگاہیں برمنگھم یونیورسٹی پر مرکوز ہیں۔ اس تحقیق کی داستان انٹرنیشنل نیویارک ٹائمز کی 24 جولائی کی اشاعت میں شایع ہوئی ہے اور یہ اشاعت ایکسپریس ٹریبیون کے واسطے سے ہم تک پہنچی ہے۔ داستان مختصراً کچھ یوں ہے کہ برمنگھم یونیورسٹی میں ایک خاتون ایلیا فضلی (Allia Fedeli) اپنی پی ایچ ڈی کی تقریب سے ایک تحقیق میں دماغ کھپا رہی تھی۔ اس ذیل میں قرآن مجید کے ایک پرانے مخطوطہ کو اپنی تحقیقی باریک بینی کے ساتھ الٹ پلٹ کر دیکھ رہی تھیں۔ اس مخطوطہ کے بیچ دو ورق یا کہہ لیجیے کہ دو پارچے ایسے نظر آئے کہ وہ ٹھٹھک گئیں۔ ان کی خطاطی باقی مخطوطہ کے خط سے کسی قدر مختلف تھی۔ یونیورسٹی نے ۔۔۔

طبقاتی سماج میں ادب کا کردار

July 27, 2015

ظہیر اختر بیدری — کہا جاتا ہے کہ ادب اور شاعری میں نظریات کا دخل ہوتا ہے تو پھر ایسا ادب ایسی شاعری ادب اور شاعری نہیں رہتی بلکہ پروپیگنڈہ بن جاتی ہے، اس فلسفے کے پیروکار یہ بھول جاتے ہیں کہ ادب اور شاعری کی پوری تاریخ نظریاتی ہی رہی ہے، مثال کے طور پر تاریخی ادب کو لے لیں، دو دو کلو کے تاریخی ناول خالص نظریاتی رہے ہیں جن میں ایک مسلمان شہزادہ یا جنگجو کسی ہندو راجکماری کے عشق میں مبتلا رہتا ہے اور اسے حاصل کرنے کے لیے کشتوں پشتے لگاتا ہے وغیرہ ۔۔۔

La tanqeed: X-ray report of contemporary Urdu literature

July 27, 2015

Rauf Parekh — In the 1960s, some poets and critics of Urdu from Lahore decided that it was just about time to try to revolutionise Urdu literature and see if it worked. Work it did, albeit briefly, as it found soon a following that turned it into a literary movement. It was called Nai Shaeri Ki Tehreek, or the new poetry ۔۔۔

The Urdu controversy

July 26, 2015

Tahir Kamran — The status of Urdu as an official as well as a national language has once again adorned the news bulletins and social media. Without any shadow of doubt, Urdu symbolises the richness of North Indian culture which is many centuries old. Urdu poetry can easily be ranked among the best in the ۔۔۔

An enlightened citizen

July 26, 2015

Intizar Husain — IN our times a number of Urdu writers have been seen off upon turning to English and expressing themselves in that language. But our critics while discussing these writers hardly care to take into account those writings and make them part of their study. So the English writings of Urdu writers stand alienated in our literary ۔۔۔