شاعروں کی محفل اور شکرگڑھ

Follow Shabnaama via email
صوفی محمد انور

محلہ مسلم ٹاؤن نورکوٹ روڈ شکر گڑھ میں کاشانہ مہروی پر حضرت پیر عثمان شاہ صاحب اپنے پیرو مرشد کا عرس مبارک 4-5-6اپریل کو کرواتے ہیں، 5اپریل رات کو محفل سماع سے پہلے شکرگڑھ کے معزز شاعروں اور حاضرین کی محفل سجاتے ہیں، شکر گڑھ ضلع نارووال کی تحصیل ہے، یہ پاکستان کے قیام سے پہلے متحدہ ہندوستان ضلع گورداسپور کی تحصیل تھی، شاید یہ پنجاب کی واحد تحصیل ہے جو ہندوستان کے کسی ضلع کی تھی، بہرحال یہ ترقی کے موجودہ دور میں تمام سہولتوں سے محروم ہے۔۔۔یہ کہانی بعد میں پہلے اصل موضوع شکرگڑھ جو ایک بارانی علاقے کی تحصیل ہے مگر اس میں بھی عوام کا درد رکھنے والے، اپنے الفاظ میں ان کو بیان کرنے والے سرکار مدینہ ؐ اور ان کے اولیائے کرام سے محبت کرنے والے شاعر موجود اور زندہ ہیں، حالانکہ شکرگڑھ کی ویران زمین پتھروں سے سخت دل رکھنے والے عوام کے نمائندے اگر اللہ تعالیٰ موسم کے لحاظ سے بارش نہ برسائے تو شکرگڑھ کے عوام خوراک کے دانے دانے کو ترستے رہیں، اگر زیادہ بارش ہوجائے جس طرح اس موسم میں بہت بارشیں ہوئی ہیں 90فیصد فصلوں کا پہلے بھی نقصان ہوگیا ہے، اور اب بھی 90فیصد سے زیادہ فصلوں کا نقصان ہوگیا ہے، یہاں پر بھی شاعر حضرات اپنی محفلیں جماتے ہیں، شاعری اور ادب کا ذوق رکھنے والوں سے داد وصول کرتے ہیں، شکرگڑھ کے قابل ذکر شاعروں میں پیر عثمان سالک شاہ، جنہوں نے پنجابی میں تقریباً دس کتابیں شائع کروائی ہیں، پنجابی ادب میں خوبصورت اضافہ ہیں ، نعتیں، غزلیں اور مختلف طرز کی شاعری میں لکھی گئی ہیں۔

ان کی 2015ء میں ’’کرم دے چھٹے‘‘ جس میں نعتیں ، غزلیں، منقبت کا بہت ہی خوبصورت گلدستہ ہے، اس سے پہلے ان کی کتاب ’’تحفہ مدینے دا ‘‘ یہ کتاب روضۂ رسول ؐ پر حاضری کے موقعہ پر لکھی گئی۔ جب پیر عثمان سالک کو اللہ تعالیٰ نے عمرے کی سعادت بخشی تو انہوں نے 2012ء میں ’’چل عثمان مدینے چلئے‘‘ لکھی، یہ بھی سرور کونین ؐ کی شان میں نعتیہ کلام اور غزلوں پر لکھی گئی کتاب ہے، اس کے ساتھ ساتھ ایک کتاب انہوں نے 2010ء میں اوہدی زلف دا وکھراناں ۔ یہ بھی پنجابی کلام ، غزلیں ، نعتیں سلام عالی مقام حضرت علی کرم اللہ وجہہ ۔ 2008ء میں تینوں ترسن میرے نین، یہ بھی خاص پنجابی وچ اونہاں دے نام لکھیا اے۔ جیہڑے مرشد پاک دی نسبت لے کر ٹرے جاندے نے۔ یہ ان کی سوچ اپنے پیرومرشد کے سلسلے مہروی شکوری کی طرف لاتی ہے۔ 2006ء میں عثمان سالک مہروی نے گوہر مقصود نام کی کتاب پنجابی میں لکھی۔ یہ کتاب انہوں نے ان کے نام کی، جومیرا گوہر مقصود ہیں۔ جومیری محبت کا وجود ہیں۔ جو میری عقیدت کا رکوع وسجود ہیں، یعنی میرے آقا ومولا ولی نعمت پیر طریقت جناب حضرت حکیم مہرالدین مہر جہاں، تب یہ حمد و نعت، غزلیات کا بہترین مجموعہ ہے۔

پیر عثمان سالک کی تمام کتابوں میں حمد باری تعالیٰ ، سرکار مدینہؐ کی نعتیں، عشق رسولؐ میں ڈوب کر لکھی گئی ہیں۔ یہ نعتیں سیرت رسولؐ کے بہت سے پہلو ہمارے سامنے اجاگر کرتی ہیں، عشق والوں کی روح کی تسکین کے لئے شاعر محمد عثمان سالک نے اپنے پیرومرشد اور دیگر بزرگان کی منقبتیں بھی پوری دلجمعی سے لکھی ہیں، ان کا ایک ایک حرف دل کی گہرائیوں سے نکل کر روح پر اثر کرتا ہے، اس مشاعرے کی محفل میں شکرگڑھ کے ماسٹر معراج خاور نے اپنا نعتیہ کلام سنایااور حاضرین سے داد وصول کی۔ ماسٹر طارق بھی شکرگڑھ کے معروف پنجابی کے شاعر ہیں۔ اشرف مہروی نے بھی اپنی نعت سنائی، شکرگڑھ کے دیگر معزز شاعروں میں بشیراقبال ، ڈاکٹر عارف ملک، مرزا دستگیر ، ماسٹر قمر، حکیم ارشد نے بھی اب تک پنجابی شاعر میں چار کتابیں لکھی ہیں۔

شکرگڑھ ایک بہت بڑی پسماندہ تحصیل ہے، یہاں کے رہائشی چھوٹے چھوٹے کاشت کار ہیں، یہ ہندوستان کا سرحدی علاقہ ہے۔ 1971ء کی جنگ میں اس تحصیل کا زیادہ حصہ ہندوستان کے قبضے میں چلا گیا تھا۔ اب اس شہر سے صرف ایک سڑک شکرگڑھ نارووال سات سال میں تعمیر کروائی گئی ہے، اس کے علاوہ سات سال سے پہلے تعمیر کی گئی سڑک شکرگڑھ ظفروال بالکل ٹوٹ چکی ہے یہ سڑک کھنڈرات میں تبدیل ہوگئی ہے، اس پر روزانہ ہزاروں لوگ بسوں، ویگنوں، کاروں، موٹرسائیکلوں پر سفر کرتے ہیں۔ متحدہ ہندوستان کے زمانے کی سڑک یسرکلاں سے سنیاری ، سوہاڑہ، گوال سے ہوتی ہوئی شکرگڑھ آتی ہے، تقریباً 12کلومیٹر ہے۔ پہلے یہ واحد سڑک تھی جو گورداسپور سے اس علاقے سیالکوٹ وغیرہ کو ملاتی تھی، اب سڑک کا نام ونشان مٹ گیا ہے۔ سب سے پرانی جرنیلی سڑک تھی، یہ سڑک دو ممبران قومی اسمبلی اور غالباً تین ممبران صوبائی اسمبلی کے حلقوں سے گزرتی ہے، یہ سڑک سینکڑوں گاؤں کے لوگوں کی ضرورت ہے، لیکن کئی سال نہ ہی ووٹ لینے والوں کو اور نہ ارباب اختیار کو توفیق ہوئی کہ اس سڑک کو تعمیر کروایا جائے۔

شکرگڑھ سے یسرکلاں جوکہ بہت بڑا قصبہ ہے، بے شمار دیہاتوں کو ملاتی ہے، اس سڑک کی تعمیر عوام کے لئے بہت ضروری ہے، اب ہر روز اخباروں میں تمام ٹی وی چینلوں پر وزیراعلیٰ پنجاب کی جانب سے دیہاتی علاقوں میں سڑکیں بنانے کا اعلان ہورہا ہے تو اس موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے مَیں گزارش کرتا ہوں حکومت پنجاب سے کہ شکرگڑھ سییسر کلاں براستہ سوہاڑہ گوال سنیاری جلد سے جلد سڑک تعمیر کروانے کا حکم صادر فرمائیں اور شکرگڑھ ، ظفروال روڈ کی مرمت کروانے کے لئے فنڈز جاری کریں، لوگ بتاتے ہیں کہ ظفروال حلقے کا ممبر صوبائی اسمبلی ترقیاتی کاموں سے کمیشن کو حرام سمجھتا ہے، اس لئے کمیشن سے پاک کام فوری کروانے کی ضرورت ہے، کم ازکم اس سال میں یہ دو سڑکیں تحصیل شکرگڑھ اور تحصیل ظفروال کے عوام کو دی جائیں۔ شکرگڑھ اور ظفروال کے مسائل پر لکھنے کے لئے ایک علیحدہ مضمون کی ضرورت ہے، مگر پھر بھی مشاعرے کے مضمون کا فائدہ اٹھاتے ہوئے صرف چند مسائل اور پریشانیوں کا ذکر ضروری تھا۔

تحصیل شکرگڑھ اور تحصیل ظفروال کا کچھ علاقہ انتہائی پسماندہ ہے۔ وہاں کے بے پناہ مسائل ہیں مگر تمام مسائل کا حل فوری ممکن نہیں، مگر دوسڑکیں انتہائی اہمیت کی حامل ہیں، عوام کی ضرورت ہیں، مَیں کسی بھی قومی وصوبائی ممبر کے بارے میں نہیں جانتا، اس علاقے کے عوام انصاف دینے والوں اور دلانے والوں سے بہت دور رہائش پذیر ہیں۔ ایک سڑک شکرگڑھ سے نیناں کوٹ کی طرف جاتی ہے، یہ دونوں ممبران قومی اسمبلی سابقہ اور موجودہ ممبر اور وزیر کے گھروں کی طرف (دیہاتوں ) جاتی ہیں۔ اس کا حال بھی دوسری سڑکوں سے اچھا نہیں، یہ بھی ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے اس کی وجہ شاید یہ بھی ہے کہ ممبران وزیروں کا اس طرف گزرنا نہیں ہوتا، اگر ہوتا ہے تو وہ آنکھیں بند کرکے جاتے ہیں۔

Citation
Sufi Muhammad Anwar, ” شاعروں کی محفل اور شکرگڑھ ,” in Daily Pakistan, April 15, 2015. Accessed on April 15, 2015, at: http://dailypakistan.com.pk/columns/15-Apr-2015/213750

Disclaimer
The item above written by Sufi Muhammad Anwar and published in Daily Pakistan on April 15, 2015, is catalogued here in full by Faiz-e-Zabaan for non-profit educational purpose only. Faiz-e-Zabaan neither claims the ownership nor the authorship of this item. The link to the original source accessed on April 15, 2015, is available here. Faiz-e-Zabaan is not responsible for the content of the external websites.

Recent items by Sufi Muhammad Anwar:

Help us with Cataloguing

Leave your comments

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s